98

غالب انسٹی ٹیوٹ میں6جولائی سے اردو ڈرامہ فیسٹول کا آغاز

نئی دہلی،05جولائی ( ہ س)غالب انسٹی ٹیوٹ کی ثقافتی تنظیم ’ہم سب ڈرامہ گروپ‘ کے زیرِ اہتمام 6جولائی سے 10جولائی تک5 دنوں کا اردو ڈرامہ فیسٹول کا انعقاد ایوانِ غالب میں کیا جارہاہے۔ اس جشنِ ڈرامہ کا افتتاح 6جولائی کو شام ساڑھے چھے بجے ملک کے سابق چیف الیکشن کمشنر ڈاکٹر ایس۔وائی۔قریشی کی افتتاحی تقریر سے ہوگااور جمّوں اینڈ کشمیرکے سابق چیف جسٹس بدر درریزاحمد مہمانِ خصوصی کی حیثیت سے موجود رہے ہیں۔ افتتاحی تقریب کے بعد معروف ہدایت کار، ڈرامہ نویس اور اداکار دانش حسین اور اُن کے ساتھ ابنِ انشاء کی تحریرپر مبنی ڈرامہ ’’قصہ اردو کی آخری کتاب کا‘‘پیش کریں گے۔اسی طرح 7جولائی کو منشی پریم چند کی کہانی کو بنیاد بناکر’ کفن۔کفن چور‘ معروف تھیئٹر فنکار ایم۔کے۔ رینا پیش کریں گے،8جولائی کو پیش کیا جانے والا ڈرامہ ’اینٹی نیشنل غالب‘ جو غالب کی زندگی پر ہے اور اسے جامعہ ملیہ اسلامیہ کے استاد پروفیسر دانش اقبال پیش کریں گے۔ 9کوبہروپ آرٹس گروپ کی طرف سے ڈرامہ ’’آدمی نامہ‘‘ پیش کیا جائے گااور اس فیسٹول کا اختتام فیض احمد فیض کی تخلیق ’چند روز اور میری جان‘‘ کو ڈرامائی انداز میں پیش کیا جائے گا جسے سلیمہ رضاپیش کریں گی۔ یہ ڈرامہ فیسٹول ملک کی سابق خاتونِ اوّل مرحومہ بیگم عابدہ احمد کی یاد میں پیش کیا جارہاہے۔ 1974 میں بیگم عابدہ احمد نے ہم سب ڈرامہ گروپ کی بنیاد رکھی تھی۔ اس طویل عرصے میں اس گروپ نے اب تک75سے زیادہ ڈرامہ کیا ہے۔ جب بھی دلی کی ادبی اثر ثقافتی تاریخ رقم کی جائے گی بیگم عابدہ احمد کا نام ہمیشہ یاد کیا جائے گا۔ ان پانچوں ڈراموں کی خاص بات یہ ہے کہ یہ پوری طرح سے ادبی اور تاریخی ہیں لہٰذا امید کی جارہی ہے کہ بڑی تعداد میں مختلف علوم و فنون کے لوگ موجود رہیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں